زندگی تجھے جینے کی حسرت ہی رہی

 

 

سرگوشی موت کی

 

ہر لمحہ تعاقب میں رہی

 

زندگی تجھے

 

جینے کی حسرت ہی رہی

 

ہر دن

 

اک خواہش سے

 

دستبردار ہوئی

 

اور

 

ہر رات کئی خواب

 

آنکھوں سے مسلتی رہی

3 thoughts on “زندگی تجھے جینے کی حسرت ہی رہی

Leave a Reply

Your email address will not be published.