Good Bye

Good Bye الوداع

اگر کوئی

مجھ سے پوچھے

کہ

کتابوں میں لکھے

لفظوں میں

ایسا لفظ جسے

مٹانا چاہوں

صفحہ ہستی سے

ہنستی بستی سے

تو ہاں

میں کہوں گی مِٹادو

اُس کو

کہ

جِس کو

کہنا مشکل نہ سہنا آساں

مگر

میرے چاہنے نہ چاہنے سے

مٹانے نہ مٹانے سے

وہ پھر بھی رُک نہ پاۓ گا

جِسے جانا ہے جاۓ گا

سنو

مانا کہ اب جانا ضروری ہے

کام ہیں بہت سے مجبوری ہے

چلو پھر ہم یہ کرتے ہیں

دوبارہ ملنے کو بچھڑتے ہیں

سو اب جب الوداع کہنا

تو اس کو ہنس کے ہے سہنا

کہ ہم کو پھر سے ملنا ہے

کہ ہم کو پھر سے ملنا ہے !!

 

بھائی کے بیرونِ مُلک جانے پر کی گئ میری بے ربط سی کوشش

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *